یوں آرہا ہے آج لبوں پر کسی کا نام| best Urdu poetry

20/07/2017, 1:44 p.m.

http://www.topandletest.blogspot.com

*​ߌکـــہکشاں غـــــــــــــزلߌ​*
߇߇ *..*_20•07•2017_
*یوں آرہا ہے آج لبوں پر کسی کا نام*
*ہم پڑھ رہے ہوں جیسے چُھپا کر کسی کا نام*

*سُنسان یُوں تو کب سے ہے کُہسارِ باز دِید*
*کانوں میں گوُنجتا ہے برابر کسی کا نام*

*دی ہم نے اپنی جان تو قاتِل بنا کوئی*
*مشہُور اپنے دَم سے ہے گھر گھر کسی کا نام*

*ڈرتے ہیں اُن میں بھی نہ ہو اپنا رقیب کوئی*
*لیتے ہیں دوستوں سے چُھپا کر کسی کا نام*

*اپنی زبان تو بند ہے، تم خود ہی سوچ لو*
*پڑتا نہیں ہے یونہی سِتمگر کسی کا نام*

*ماتم سَرا بھی ہوتے ہیں کیا خود غَرَض قتیل*
*اپنے غموں پہ روتے ہیں لے کر کسی کا نام*
*قتیل شفائی*
*ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*
ــ*
20/07/2017, 1:44 p.m.

http://www.topandletest.blogspot.com

*​ߌکـــہکشاں غـــــــــــــزلߌ​*
߇߇ *..*_20•07•2017_
*اب کے یو ں بھی تری زلفوں کی شکن ٹوٹی ہے*
*رنگ پھوٹے، کہیں خوشبو کی رسن ٹوٹی ہے*

*موت آئی ہے کہ تسکین کی ساعت آئی*
*سانس ٹوٹی ہے کہ صدیوں کی تھکن ٹوٹی ہے*

*سینہِ گل جہاں نکہت بھی گراں ٹھہری تھی*
*تیر بن کر وہاں سورج کی کرن ٹوٹی ہے*

*دِل شکستہ تو کئی بار ہوئے تھے لیکن*
*اب کے یوں ہے کہ ہر اک شاخ ِ بدن ٹوٹی ہے*

*اتنی بے ربط محبت بھی کہاں تھی اپنی*
*درمیاں سے کہیں زنجیرِ سخن ٹوٹی ہے*

*اک شعلہ کہ تہہِ خیمہء جاں لپکا تھا*
*ایک بجلی کہ سرِ صحنِ چمن ٹوٹی ہے*

*سلسلہ تجھ سے بچھڑنے پہ کہاں ختم ہوا*
*اک زمانے سے رہ و رسم کہن ٹوٹی ہے*

*مرے یاروں کے تبسم کی کرن مقتل میں*
*نوک ِ نیزہ کی طرح زیرِ کفن ٹوٹی ہے*

*ریزہ ریزہ میں بکھرتا گیا ہر سو محسن*
*شیشہ شیشہ مری سنگینیء فن ٹوٹی ہے*

*محسن نقوی*
*ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*

*ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*
20/07/2017, 1:44 p.m.

http://www.topandletest.blogspot.com

*​ߌکـــہکشاں غـــــــــــــزلߌ​*
߇߇ *..*_20•07•2017_
*مَیں نے بھی تُہمَتِ تَکفِیر،،،،، اُٹھائی ہُوئی ہے،*
*اَیک نَیکی مَیرے حِصّے میں بھی آئی ہُوئی ہے،*

*مَیرے کاندھُوں پہ دھَرا ہے کَوئی ہارا ہُوا عِشق،*
*یَہی گَٹھڑِی ہے جَو مُدَّت سے اُٹھائی ہُوئی ہے،*

*تُم تَو آئے ہَو اَبھی، دَشتِ مُحَبَّت کی طَرَف،*
*مَیں نے یہ خاک بہت پَہلے اُڑائی ہُوئی ہے،*

*ٹُوٹ جاؤں گا،،،،،،،،،، اَگَر مُجھ کَو بَنایا بھی گَیا،*
*کَوئی شے اَیسی مَیری جاں میں سَمائی ہُوئی ہے،*

*سَرد مُہری کے عِلاقے میں ہُوں مَصرُوفِ دُعا،*
*زِندہ رَہنے کے لِیے،،،،،،، آگ جَلائی ہُوئی ہے،*

*قِصّہ گَو ! اَب تَیری چَوپال سے مَیں چَلتا ہُوں،*
*رات بھی بِھیگ چُکی،نِیند بھی آئی ہُوئی ہے…*
*ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*
ߑߏ *رانا فــہیم احمــدــــ*ߒ ߑߏ
*ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*
20/07/2017, 1:44 p.m.

http://www.topandletest.blogspot.com

*​ߌکـــہکشاں غـــــــــــــزلߌ​*
߇߇ *..*_20•07•2017_
*لا اک خم شراب کہ موسم خراب ہے*
*کر کوئی انقلاب کہ موسم خراب ہے*

*زلفوں کو بے خودی کی ردا میں لپیٹ دے*
*ساقی پئے شباب کہ موسم خراب ہے*

*جام و سبو کے ہوش ٹھکانے نہیں رہے*
*مطرب اٹھا رباب کہ موسم خراب ہے*

*غنچوں کو اعتبار طلوع چمن نہیں*
*رخ سے الٹ نقاب کہ موسم خراب ہے*

*اے جاں ! کوئی تبسم رنگیں کی واردات*
*پھیکا ہے ماہتاب کہ موسم خراب ہے*
*ساغر صدیقی*
*ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*
ߑߏ *رانا فــہیم احمــدــــ*ߒ ߑߏ
*ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*
20/07/2017, 1:44 p.m. http://www.topandletest.blogspot.com *​ߌکـــہکشاں غـــــــــــــزلߌ​*
߇߇ *..*_20•07•2017_
*نظر نظر بیقرار سی ہے نفس نفس میں شرار سا ہے*
*میں جا نتا ہوں کہ تم نہ آؤگے پھر بھی کچھ انتظار سا ہے*

*مرے عزیزو! میرے رفیقو! چلو کوئی داستان چھیڑو*
*غم زمانہ کی بات چھوڑو یہ غم تو اب سازگار سا ہے*

*کبھی تو آؤ ! کبھی تو بیٹھو! کبھی تو دیکھو! کبھی تو پوچھو*
*تمہاری بستی میں ہم فقیروں کا حال کیوں سوگوار سا ہے*
*ساغر صدیقی*
*ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*

*ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*
20/07/2017, 1:44 p.m.

http://www.topandletest.blogspot.com

*​ߌکـــہکشاں غـــــــــــــزلߌ​*
߇߇ *..*_20•07•2017_
*کانٹوں سے بھرا ہے دامنِ دِل شبنم سے سُلگتی ہیں پلکیں*
*پُھولوں کی سخاوت کیا کہئیے کُچھ یاد رہی کُچھ بھول گئے*

*اب اپنی حقیقت بھی ساغر بے ربط کہانی لگتی ہے*
*دُنیا کی کی حقیقت کیا کہئیے کُچھ یاد رہی کُچھ بھول گئے*
*ساغر صدّیقی*
*ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*
ߑߏ *رانا فــہیم احمــدــــ*ߒ ߑߏ
*ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*
20/07/2017, 1:44 p.m.

http://www.topandletest.blogspot.com

*​ߌکـــہکشاں غـــــــــــــزلߌ​*
߇߇ *..*_20•07•2017_
*چاکِ دامن کو جو دیکھا تو مِلا عید کا چاند*
*اپنی تقدیر کہاں بُھول گیا عید کا چاند*

*اُن کے اَبروئے خمیدہ کی طرح تیکھا ہے*
*اپنی آنکھوں میں بڑی دیر چُھپا عید کا چاند*

*جانے کیوں آپ کے رُخسار مہک اُٹھتے ہیں*
*جب کبھی کان میں چپکے سے کہا عید کا چاند*

*دُور ویران بسیرے میں دِیا ہو جیسے*
*غم کی دیوار سے دیکھا تو لگا عِید کا چاند*

*لے کے حالات کے صحراؤں میں آ جاتا ہے*
*آج بھی خُلد کی رنگین فضا عید کا چاند*

*تلخیاں بڑھ گئیں جب زیست کے پیمانے میں*
*گھول کر دَرد کے ماروں نے پیا عید کا چاند*

*چشم تو وُسعتِ افلاک میں کھوئی ساغر*
*دِل نے اِک اور جگہ ڈھونڈ لیا عید کا چاند*
*ساغر صدیقی*
*ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ*

Advertisements
This entry was posted in Uncategorized, Urdu Adab. Bookmark the permalink.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s